top of page

پولیس کا فرض ھے مدد آپ کی۔شہریوں کا پکڑا ھوا ڈکیتی کا ملزم پولیس نے چھوڑ دیا۔

پنڈدادنخان

غریب وال کے باسیوں نے 10 جولائی کو ہونے والی ڈکیتی کا ملزم پکڑ کر پولیس کے حوالے کیا اس پولیس نے چند گھنٹوں بعد ہی پریشر کے باعث چھوڑ دیا.دو ملزمان چند ھفتے قبل جوتانہ سے ڈیڑھ لاکھ روپے رقم اور موٹر سائیکل گن پوائنٹ پر چھین کر فرار ہو گئے تھے

پنڈدادنخان: جوتانہ میں تین ھفتے قبل ہونے والی مسلح ڈکیتی کا ایک ملزم مدعیوں نے پہچاننے کے بعد پکڑ کر تھانہ پنڈدادنخان دھریالہ چوکی پولیس کے حوالے کر دیا تفصیلات کے مطابق تین ھفتےقبل نکیال کے رہائشی سے دو مسلح افراد نے گن پوائنٹ پر ڈیڑھ لاکھ سے زائد کی رقم اور موٹرسائیکل چھین کر فرار ہو گئے تھے مدعیوں کی طرف سے مذکورہ ملزمان کی تلاش کا عمل کافی دنوں سے جاری تھا کہ غریب وال فیکڑی میں دونوں ملزمان میں سے ایک نظر اگیا جسے پہچانتے ہوئے فوری طور پر پکڑ لیا گیا اور چوکی دھریالہ جالب پولیس کے حوالے کر دیا گیا مذکورہ ملزم کے دوسرے ساتھی کی ابھی تک نشاندہی نہیں ہو سکی لیکن سامنے انے پر مدعیوں کا کہنا ہے کہ اسے بھی پہچان لیا جائے گا میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے ڈکیتی کا شکار ہونے والے افراد کا کہنا ہے کہ ہم نے سوشل میڈیا اور دیگر ذرائع استعمال کرتے ہوئے اس شخص کا کھوج لگایا اور ہمیں 100 فیصد یقین ہے کہ ہمارے ڈکیتی کا ملزم یہی ہے

ابتدائی معلومات کے مطابق ملزم گارڈ کی سیٹ پر کام کر رہا ہے جبکہ اسے باثر افراد کی پشت پناہی حاصل ہے مذکورہ ملزم کو چوکی دھریالہ جالب نے غریب وال فیکٹری کے باثر افراد اور سکیورٹی کمپنی کے دباؤ پر وی ائی پی پروٹوکول دینے کے بعد کمپرومائز کرنے کے لیے چھوڑ دیا بعد ازیں غریب وال میں ایک جرگہ بیٹھا اور جرگے میں فیصلہ کیا گیا تھا کہ مدعیوں سے لوٹی ہوئی رقم ڈیڑھ لاکھ روپیہ اور موٹر سائیکل کی قیمت دو لاکھ روپیہ ادا کی جائے گی .گویا ملزم کی طرف سے اعتراف تھا کہ اس نے ڈکیتی کی واردات کی ہے اعتراف جرم کی اوازیں اٹھنے کے بعد تھانہ پنڈدادنخان اوردریالہ جالب چوکی کے اہلکاروں کے ذریعے معاملات کو پس پشت ڈال کر مدعیوں کو تنگ کرنے کا سلسلہ شروع کیا گیا فیکٹری کے بااثر افسران سیکورٹی کمپنی اور مقامی سفید پوش ڈکیتی جیسے معاملے کو دبانے کی کوشش میں مصروف



0 comments

コメント

5つ星のうち0と評価されています。
まだ評価がありません

評価を追加
bottom of page