top of page

پنڈدادنخان پینے کا پانی اور نہ ہی سر چھپانے کے لئے سایہ ، نادرا آفس لوگوں کے لئے وبال جان بن گیا



پنڈدادنخان :پنڈدادنخان نادرا آفس دور دراز علاقوں سے آنے والوں کے لئے وبال بن گیا نہ پینے کا پانی ے اور نہ ہی سر چھپانے کے لئے سایہ ہے شدید گرمی میں مردوزن کھلے آسمان تلے بیٹھنے پر مجبور ،خواتین کے بیٹھنے کے لئے علیحدہ انتظام نہیں ے نادرا دفتز مین روڈ پر واقع ےصبح 6 بجے سے اپنی باری کیلئے لائنوں میں لگ جاتے ہیں جب کہ باری آنے پر مختلف دستاویزات کی ڈیمانڈ کر کے دوبارہ آنے کا کہہ دیا جاتا ہے اس حوالے سے نادرہ پنڈدادنخان کو بارہا کہا گیا ہے کہ ایک کاؤنٹر باہر عوام میں بھی لگا دیا جائے جس پر جا کر عوام پہلے اپنے دستاویزات چیک کروایں تب لائنوں میں لگیں مگر نادرا انتظامیہ کو عوامی مفاد سے کوئی دلچسپی نہیں عملہ خود تو اے سی کی ٹھنڈی ہواؤں میں نیند پوری کرتا رہتا ہے جبکہ عوام باہر شدید گرمی میں بیٹھے ٹھنڈے پانی اور چھاؤں کو ترستے ہیں سیکڑوں لوگ روزانہ کی بنیاد پر نادرا آفس پنڈدادنخان اپنے شناختی کارڈ اور دیگر دستاویزات کے لئے آتے ہیں جن کو ٹوکن دینے کیلئے صرف ایک کاؤنٹر موجود ہے جس پر براجمان عملہ (اگر نیند میں نہ ہو تو) مرضی سے کام کرتا ہے جبکہ تعلقات کی بنیاد پر فورا" ٹوکن فراہم کر دیا جاتا ہے اس کے علاوہ مین سڑک کنارے جس پر ہر وقت ہیوی ٹریفک رواں دواں رہتی ہے نادرا آفس کا ہونا بھی ایک المیہ ہے جو کہ کسی بھی وقت بڑے حادثے کا سبب بن سکتا ہے خواتین کے لئیے علیحدہ بیٹھنے کا کوئی انتظام نہیں سیکورٹی کے انتظامات انتہائی ناقص ہیں مقامی انتظامیہ ہر وقت یہاں سے گزرتی ے لیکن عوام کو سہولت فراہم کرنے میں ناکام نظر آتی ے پینے کاپانی کا کوئی انتظام نہیں یہاں تک بیت الخلاء کی سہولت نہیں بوڑھے خواتین اور بچے کہاں جائیں تحصیل بھر کے عوام مقامی تاجران اور صافیوں نے وفاقی وزیر داخلہ رانا ثناءاللہ اور جی ایم نادرا سے فوری اصلاح و حوال کا مطالبہ کیا ہے

0 comments

Comments

Rated 0 out of 5 stars.
No ratings yet

Add a rating
bottom of page