top of page

فنِ ترجمہ پر منعقد ایک روزہ ورکشاپ کی رُوداد و جھلکیاں بقلم: ڈاکٹر فیض احمد بھٹی


فنِ ترجمہ پر منعقد ایک روزہ ورکشاپ کی رُوداد و جھلکیاں

بقلم:

ڈاکٹر فیض احمد بھٹی

المدرار انسٹیٹیوٹ آف کراچی کے زیر اہتمام "لاہور" میں عربی سے اردو ترجمہ کی مہارت کے شوقین طلبا کےلیے فن ترجمہ کے راہنما اصولوں پر ایک علمی ورکشاپ بعنوان"فن ترجمہ کا تعارف" منعقد کی گئی۔

اس نشست میں اردو کے مشہور مترجم اور مصنف کتب کثیرۃ فضیلۃ الشیخ حافظ محمد اسلم شاھدروی نے اپنے تجربات کا نچوڑ پیش کیا۔

نشست کے آغاز میں حافظ محمد اسلم شاہدروی نے فن ترجمہ کی اہمیت، تاریخ اور اس کے بنیادی اصولوں پر روشنی ڈالی۔ اور اس پر نصوصِ قرآنیہ اور احادیث نبویہ سے کئی استشھادات بھی پیش کیے۔

نشست میں درج ذیل اہم موضوعات پر تفصیلی گفتگو کی گئی:

1فن ترجمہ کی تعریف، 2اہمیت و افادیت، 3ترجمہ کی تاریخ، 4ترجمہ کی اقسام، 5مترجم کے لیے ضروری صفات، 6ترجمہ کے مراحل، 7ترجمہ نویسی کے دوران درپیش مشکلات اور ان کا حل، 8صحیح و غلط ترجمہ کی پہچان۔

علاوہ ازیں طلبا کو اس سلسلے میں جامع مانع عملی مشق سے بھی گزارا گیا۔ حضرۃ الشیخ شاھدروی کی چند عربی سے اردو ترجمہ شدہ کتب کے اسماء و خصائص سے بھی روشناس کروایا گیا جو کہ ذیل میں مذکور ہیں:

1فتح القدیر، 2مشکاۃ المصابیح، 3فقہ السنہ (سید سابق)، 4الوجیز فی اصول الفقہ، 5المنجد، 6اغاثۃ اللھفان، 7مھذب شرح عقیدۃ طحاویہ (غیر مطبوع)، 8بیان زندگی (موجودہ حاکم شارجہ سلطان بن محمد القاسمی کی سوانح حیات) وغیرہ۔

اس نالج فُل ورکشاپ کا اختتام دعائے خیر سے کیا گیا۔ شرکاء نے اس ورکشاپ کو بے حد معلوماتی اور مفید قرار دیا۔

یاد رہے! حضرۃ الشیخ حافظ محمد شاھدروی سے راقم السطور نے درسِ نظامی کے ابتدائی اسباق پڑھے ہیں۔ اور تاحال ان سے رہنمائی کی سعادت حاصل کرتا رہتا ہے۔

آپ ایک بلند پایا عالم دین اور مفکر اسلام ہیں۔ آپ کئی اداروں میں مختلف شعبہ جات کے حوالے سے بطور سربراہ خدمات انجام دے رہے ہیں۔ آپ کئی اہم ترین کتب کے مترجم و مؤلف ہیں۔ (متعنا اللہ طول حیاتہ، و دامت برکاتہ)

0 comments

Comments

Rated 0 out of 5 stars.
No ratings yet

Add a rating
bottom of page