top of page

دینہ: محکمہ سول ڈیفنس کی غفلت یا ملی بھگت تحصیل بھر میں ایک مرتبہ پھر غیر قانونی پٹرول ایجنسیاں بحال

دینہ (پروفیسر خورشید علی ڈار)پٹرول ایجنسی داتا روڈ دینہ پاکستان چوک پر دھماکے اور آگ بھڑکنے کے بعد انتظامیہ نے گرینڈ آپریشن کیا مگر اج صورت حال دوبارہ سابقہ بحال ہو چکی ہے وقتی آپریشن کے نتائج ہمیشہ خطرناک ثابت ہوتے ہیں ۔

تفصیلات کے مطابق چند روز قبل داتا روڈ دینہ پاکستان چوک پر ایک غیر قانونی پٹرول ایجنسی میں شدید دھماکہ ہوا تھا جس کے نتیجے میں کافی مالی نقصان ہوا جانی نقصان سے اہل محلہ اتفاق سے بچ گئے اس میں کوئی شک نہیں کہ واقعہ کے بعد انتظامیہ نے تحصیل بھر میں آپریشن کیا تھا اس نوعیت کے آپریشن تحصیل دینہ میں مختلف مقامات پر ہوئے تھے زمینی حقائق کے مطابق مذکورہ آپریشن صرف اور صرف وقتی تھا اب پرانے اڈے پھر بحال ہوگئے ہیں جگہ جگہ پر پیٹرول اور گیس ری فیلینگ کا غیر قانونی دھندہ دوبارہ شروع کر دیا گیا ہے۔ تحصیل دینہ کے دیہاتوں، گلی محلوں پٹرول گیس ری فیلنگ کی شکل میں چھوٹے چھوٹے ایٹم بم نصب ھیں۔ جو کسی بھی وقت پھٹ کر شدید جانی و مالی نقصان پہنچا سکتے ہیں۔ مقام افسوس ہے کہ یہ گندا کام کرنے والے اشخاص چند پیسوں کی خاطر انسانی زندگیوں سے کھیل رہے ہیں ان کے خلاف نا صرف سخت ایکشن لینے کی ضرورت ہے بلکہ اس کا تسلسل ازحد ضروری ہے مشاہدے میں آیا ہے کہ میونسپل کمیٹی دینہ بھی جب کبھی بھی تجاوزات کے خلاف آپریشن کرتی ہے تو وقتی طور پر خاموشی ہو جاتی ہے مقام افسوس چوبیس گھنٹے کے بعد دوبارہ تجاوزات کی شکل بحال ہوجاتی ہے سیاسی سماجی زعماء دینہ نے تحصیل دینہ کی انتظامیہ سے مطالبہ کیا ہے کہ مذکورہ بالا گندا کام کرنے والوں کے خلاف قانون کے مطابق نا صرف ایکشن لیا جائے بلکہ ایکشن لینے کا عمل مستقل بنیادوں پر ہو اس وقت ایک عام شہری ہر طرف کے مسائل میں گھیرا ہوا ہے مہنگائی زوروں پر ہے انصاف کا فقدان ہے کہ طاقت ور طاقت کا مظاہرہ کرنے میں مصروف ہیں انتظامیہ مصلحت کا شکار ہے بلاشبہ مذکورہ واقعات پاکستان کی تخلیق کے بر عکس ہیں

0 comments

Comments

Rated 0 out of 5 stars.
No ratings yet

Add a rating
bottom of page