top of page

دینہ ( ادریس چودھری)موٹر سائیکل سواروں اور رکشے والوں نے منگلا روڈ کو موٹروے بنا دیا آئے روز حادثات، قیمتی جانیں ضائع ہونے لگیں،عوامی حلقوں کا منگلا روڈ پر فوری طور پر سپیڈ بریکرز بنانے کا مطالبہ


دینہ ( ادریس چودھری)موٹر سائیکل سواروں اور رکشے والوں نے منگلا روڈ کو موٹروے بنا دیا آئے روز حادثات ہونے لگے قیمتی جانیں ضائع ہونے لگیں، لوگ معذور ہونے لگے عوامی حلقوں کا منگلا روڈ پر فوری طور پر سپیڈ بریکر بنانے کا مطالبہ۔ تفصیلات کے مطابق خدا خدا کر کے منگلا روڈ کی از سر نو تعمیر ہوئی جس پر پورے علاقے نے سکون کا سانس لیا جہاں پر منگلا روڈ کے بہت سے فائدے ہیں وہاں پر من چلے موٹر سائیکل سواروں رکشے والوں نے اس سڑک کو موٹروے کی طرح استعمال کرنا شروع کر دیا ہے اس سڑک پر کئی سرکاری اور غیر سرکاری تعلیمی ادارے بھی موجود ہیں جن کی وجہ سے ان اداروں کے طلباء و طالبات کو بھی ہر وقت اپنی جانوں کی فکر لاحق ہوتی ہے موٹر سائیکل سواروں رکشہ والوں اور دیگر ٹرانسپورٹر نے بھی سڑک کو ریس گاہ بنا لیا ہے داتا چوک دینہ سے لے کر نکودر چوک تک تقریبا پانچ کلومیٹر کے فاصلے تک منگلا روڈ پر کوئی سپیڈ بریکر نہیں ہے جس کی وجہ سے ہر روز کسی نہ کسی مقام پر حادثہ ہوتا ہے لوگ اپنی جانوں سے جاتے ہیں اور زندگی بھر کے لیے معذور ہو جاتے ہیں سڑک کو نہایت غلط طریقے سے استعمال کیا جا رہا ہے اہل علاقہ بالخصوص سڑک کے کنارے آباد مکینوں نے وزیراعلی پنجاب محترمہ مریم نواز ڈپٹی کمشنر جہلم اسسٹنٹ کمشنر دینہ سے پرزور مطالبہ کیا ہے کہ وہ منگلا روڈ دینہ پر مختلف مقامات پر خصوصا تعلیمی درسگاہوں اور کاروباری اداروں کے آگے سپیڈ بریکر بنائے جائیں اور ساتھ ہی ٹریفک پولیس کو پابند کیا جائے کہ وہ اوور سپیڈ کرنے والے ٹرانسپورٹروں موٹر سائیکلز ، رکشے والوں کے فوری طور پر چالان کرے سپیڈ بریکر بننے سے لوگوں کی قیمتی جانوں کو بچایا جا سکے گا



0 comments

Comments

Rated 0 out of 5 stars.
No ratings yet

Add a rating
bottom of page