top of page

جہلم:ٹریفک پولیس کی مجرمانہ غفلت۔عملہ موبائلز اور خوش گپیوں میں مصروف ۔شہریوں کی مشکلات بڑھ گئیں

جہلم ( ڈاکٹر اعجاز اعوان ) ٹریفک پولیس کی مجرمانہ غفلت کے باعث شہریوں کی مشکلات میں دن بدن آضافہ ، شہر کے اھم چوک چوہراوں پر تعینات ٹریفک کا عملہ موبائلز اور خوش گپیوں میں مصروف نظر آتا ھے . جہلم شہر کی مین شاہراہ ریلوے روڈ ، سول لائن روڈ اور قبرستان روڈ جہاں ٹریفک کا لوڈ دکھائی دیتا ھے وھاں اکثرو بیشتر ٹریفک کا نظام سست روی کا شکار رہنا معمول ھے جبکہ ٹریفک پولیس شاندار چوک میں ناکہ لگاۓ موٹر سائیکلز والوں کے جرمانے کرنے میں مصروف عمل دکھائی دیتی ھے ، درجنوں چالان ھر روز کس کی اجازت سے ھوتے ھے اور لگتا یوں ھے کہ ٹریفک پولیس جیسے ٹارگٹ پورا کرنے میں محو ھوتی ھے اور اکثر وبیشتر شہر سے ہٹ کر ٹریفک پولیس کے آفیسران شہر سے باہر جہاں ٹریفک کا کوئی مسئلہ درپیش نہیں ھوتا وہاں چالان کرنے میں ہی مصروف رہتے ہیں ۔ شہر سے باہر سنسان پوائنٹس پر ناکے نہ جانے کس مقصد کیلئے لگائے جاتے ہیں ، جبکہ شہر بھر میں چاروں اطراف غیر قانونی پارکنگ اور رکشہ اسٹینڈز قائم ھو چکے ہیں اسی طرح ہر طرف سڑکوں کے کناریے بلڈنگ میٹریل کے درجنوں غیر قانونی ٹھیے بھی قائم ھو چکے ہیں ۔ جہاں رش کے اوقات میں ٹریفک کا جام رہنا معمول بن چکا ھے جس سے عوام کو آمدو رفت کیلئے سخت پریشانی کا سامنا رہتا بے ۔ سروے رپورٹ کے مطابق چھوٹے موٹےحادثات کی سب بڑی وجہ ٹریفک پولیس کی غفلت کا نتیجہ ھے اس غفلت و عدم دلچسپی کے علاوہ 2000 سے زیادہ رکشے بھی شہر میں ٹریفک کی بندش اور گاڑیوں کے آپس میں ٹکرانے اور لڑائی جھگڑے کا سبب بن رہے ہیں ۔ جبکہ کم عمر اور نا تجربہ کار ڈرائیورز بھی وہیکلز چلا رہے ہوتے ہیں جن کے پاس ڈرائیونگ لائسنس موجود ہی نہیں ھوتا۔ دوسری طرف شہر بھر اور شہر کے چاروں اطراف رکشہ ڈرائیور جہاں جی میں آئے رکشے کھڑیےکرکےسواریاں بٹھاتے دکھائی دیتے ہیں اور کہیں بھی ٹریفک پولیس اہلکار ڈیوٹی پر موجود نہیں ھوتا ۔ اسی طرح ریڑھی بانوں کو بھی شہر بھر میں کہیں بھی چوک چوہراہوں پر دوکان سجا کر ٹریفک میں خلل اور عوام کی آمدو رفت میں رکاوٹ ڈالنے کی کھلی چھٹی ھے ۔ جبکہ حال ہی میں جہلم کیلئے ایک اچھے پروفیشنل ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر کی تعیناتی عمل میں لائی گئی ھے جن سے شہریوں نے بہتری کی آمیدیں باندھ لی ہیں۔ نئے تعینات ھونے والے آفیسر سے آمید کی جارہی ھے کہ شہر میں ٹریفک کے نظام میں بہتری لاکر شہریوں کے مسائل میں کمی لائ جائے گی ۔

0 comments
bottom of page