top of page

جہلم!دکانداروں نے بازاروں کو بلاک کر دیا 15 سے 20 فٹ تک دکانیں سڑکوں تک لے آئے پیدل گزرنا بھی دشوار

جہلم (ڈسٹرکٹ رپورٹر)  دکانداروں نے بازاروں کو بلاک کر دیا  15 سے 20  فٹ تک دکانیں سڑکوں تک لے آئے پیدل گزرنا بھی دشوار ہوگیا ایک دوسرے کی ضد نے خریداروں کو بھی پریشان کر دیا انتظامیہ خاموش  تفصیلات کے مطابق شہر کے اکثر بازاروں میں دکاندار حضرات کا قبضہ سڑکوں کو بھی بلاک کر دیا آدھی سے زیادہ دکان سڑکوں پر لگا دی گئی پیدل چلنا بھی دشوار ہوگیا  20 فٹ کی سڑک  سکڑ کر  5 فٹ تک رہ گئی گارمنٹس کی دکانوں کو سڑکوں پر سجا دیا گیا خواتین کو خریداری کے لیے دقت کا سامنا جبکہ موٹرسائیکل سوار بھی ٹریفک میں پھنس گئے انتظامیہ خاموش انکروچمنٹ آفیسر بھی بازاروں سے غائب دکانداروں نے سڑک کو بھی اپنی ملکیت بنا لیا ایک دکاندار اگر دس فٹ سڑک پر آتا ہے تو اس کی ضد میں دوسرا دکاندار  پندرہ فٹ تک سڑک پر اجاتا ہے جبکہ باقی رہی سہی کسر ریڑھی بانوں نے نکال دی میونسپل کمیٹی کے اہلکار عیدی بنانے میں مصروف جبکہ خریداری کے لیے آنے والے پریشان  شہریوں کا کہنا ہے کہ اس وقت مین بازار چوک اہلحدیث کناری بازار میں خریداری کرنا جان جوکھوں کا ہی کام ہے بازار بلاک ہوچکے ہیں دکانداروں نے سڑکوں پر بھی دکانیں سجا لیں کوئی پوچھنے والا نہیں جبکہ بازار کا راستہ اتنا تنگ ہوچکا ہے کہ رش کی وجہ سے کندھے سے کندھا ساتھ لگ جاتا ہے جبکہ اس موقع کو بھانپتے ہوئے اوباش نوجوانوں کو خواتین کو تنگ کرنے کا ایک موقع فراہم کر دیا گیا ہے اس وقت مین بازار میں سب سے زیادہ رش بڑھ گیا ہے جس کی وجہ یہ ہے کہ دکانداروں نے سڑکوں پر بھی قبضہ جما لیا ہے شہریوں نے میونسپل کمیٹی کے انکروچمنٹ آفیسر اور ڈپٹی کمشنر سمیع اللہ فاروق سے مطالبہ کیا ہے کہ سڑکوں پر قابض دکانداروں کو تجاوزات بڑھانے کا فوری نوٹس لیا جائے اور بازاروں کو کشادہ کیا جائے تاکہ خوارین کو خریداری کرنے میں آسانی رہے جس طرح اس وقت بازاروں کی حالت ہوچکی ہے اس سے خدشہ ہے کہ کوئی ناخوشگوار واقعہ بھی  ہیش نہ آجائے 

0 comments
bottom of page