top of page

جہلم:اسسٹنٹ کمشنر کاتجاوزات کے خلاف آپریشن،جرمانے ،سامان ضبط۔ آپریشن کے بعد پھرپرانی صورت حال بحال۔



اسسٹنٹ کمشنر جہلم۔ تجاوزات کے خلاف آپریشن کی نگرانی کرتے ہوئے

جہلم (ڈاکٹر سہیل امتیاز خان سے)جہلم اسسٹنٹ کمشنر مبین کا چوک اہلحدیث ،کناری بازار ،مین بازار میں میونسپل کارپوریشن کے عملہ کے ہمراہ تجاوزات کے خلاف آپریشن کناری بازار اور چوک اہلحدیث میں معتدد دکانداروں کو ہزاروں روپے جرمانے کیے اور سامان بھی ضبط کیے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا میں روزانہ کی بنیاد پر بازاروں میں نہیں آ سکتا ہاں میونسپل کارپوریشن کے انکروچمنٹ کے عملہ کی ذمہ داری ہے میری نہیں دوسری جانب میونسپل کارپوریشن کا ایک اہلکار موٹر سائیکل پر اسسٹنٹ کمشنر کے بازار آنے سے پہلے ہی دکانداروں کو آپریشن کی آگاہی دے چکا تھا اسسٹنٹ کمشنر کے دفتر سے نکلنے سے پہلے ہی دکانداروں کو آپریشن کی اطلاع دے دیتے ہیں اگر اسسٹنٹ کمشنر ہی دفتر میں بیٹھے سب اچھا کی رپورٹ پر کام کرتے رہے تو شہر سے انکروچمنٹ کبھی ختم نہیں ہو سکتی جبکہ شہر میں انکروچمنٹ کے ذمہ دار خود میونسپل کارپوریشن کا کرپٹ عملہ ہے جب تک ایسے کرپٹ اور بھتہ خور اہلکاروں کے خلاف کارروائی عمل میں نہیں لائی جائے گی تب تک شہر سے انکروچمنٹ ختم نہیں ہو سکتی شہریوں نے ڈپٹی کمشنر اور اسسٹنٹ کمشنر کو روزانہ کی بنیادوں پر انکروچمنٹ پر کام کرنے کا مطالبہ کر دیا۔ادھر اے سی جہلم کے آپریشن ختم کرنے کے فوری بعد دوبارہ تجاوزات قائم ہو گئیں۔ شہریوں کو وقتی ریلیف حاصل ہوا۔ مگر بعد میں پھر وہی پرانا تماشا شروع ہو گیا۔ جس کی وجہ اسے سی کا تجاوزات کے خلاف آپریشن ناکام ہو گیا۔ شہریوں نے اس صورت حال پر مایوسی اور بے چینی کا اظہار کیا ہے۔ انہوں نے نگران وزیر اعلیٰ محسن نقوی اور کمشنر راولپنڈی سے پرزور مطالبہ کیا ہے کہ وہ اس صورت حال کا فوری نوٹس لیں اور ڈی سی جہلم کو پابند کریں کہ وہ روزانہ کی بنیاد پر خود شہر میں تجاوزات کی نگرانی کریں۔


0 comments
bottom of page