top of page

تحصیل دینہ تجاوزات، اسسٹنٹ کمشنر دینہ، چیف آفیسر میونسپل کمیٹی دینہ سے15 روز کے اندر جواب طلب

دینہ(نثار مغل سے) لاہور ہائی کورٹ راولپنڈی بنج کے جسٹس جواد حسن نے افتخار احمد مغل سابقہ کونسلرز میونسپل کمیٹی دینہ کی درخواست رٹ پٹیشن توہین عدالت پر عابد حسین عابد ایڈوکیٹ سپریم کورٹ کے دلائل سننے کے بعد تحصیل دینہ تجاوزات پر اسسٹنٹ کمشنر دینہ انزیٰ عباسی اور چیف آفیسر میونسپل کمیٹی دینہ گلشن نورین کو 15 روز کے اندر اندر تحریری جواب عدالت میں جمع کرانے کا حکم دے دیا ۔تفصیلات کے مطابق لاہور ہائی کورٹ راولپنڈی بنج کے جسٹس جواد حسن نے افتخار احمد مغل سابقہ کونسلر میونسپل کمیٹی دیہ کی ناجائز تجاوزات کے بارے میں رٹ پٹیشن پر سکینگ آرڈر اور کاروائی کا حکم دیا تھا ۔جو کہ عابد حسین عابد ایڈوکیٹ سپریم کورٹ کی وساطت سے دائر کی گئی تھی ۔عدالتی حکم کے باوجود اسسٹنٹ کمشنر دینہ انزیٰ عباسی اور چیف آفیسر میونسپل کمیٹی دینہ گلشن نورین نے کوئی کاروائی نہ کی ۔جس پر گذشتہ روز افتخار احمد مغل نے عابد حسین عابد ایڈوکیٹ کی وساطت سے دوبارہ توہین عدالیت کی درخواست بعدالت جسٹس جواد حسن ہائی کورٹ راولپنڈی بنج میں دائر کر دی جس پر بعدالت جناب جسٹس جواد حسن نے پندرہ روز میں اسسٹنٹ کمشنر دینہ اور چیف آفیسر میونسپل کمیٹی دینہ سے تحریری جواب طلب کر لیا گیا ۔اس دوران صرف فرحت جمیل انسپکٹر تجاوزات کو معطل کیا گیا ۔جبکہ صوبائی مختسب اعلیٰ پنجاب جہلم برانچ نے بھی خورشید احمد اور محمد صدام سکنہ کیانی سٹریٹ دینہ کی درخواست پر انکوائری کے بعد کمشنر راولپنڈی ڈویژن کو سبزی منڈی میں غیر قانونی کھوکھا جات لگانے اور لاکھوں روپے گھپلا کرنے والوں کے خلاف کاروائی کرنے کا حکم دیا تھا ۔یاد رہے کہ ایک مخصوص گروپ نے سبزی منڈی دینہ اور جی ٹی روڈ کے دونوں اطراف لاکھوں روپے کا غبن کر کے غیر قانونی کھوکھے لگوا کر گورنمنٹ کی قیمتی جائیداد پر قبضہ کرایا ۔جس کی کئی سرکاری آفیسر نے بھی مال پانی کی خاطر ان لوگوں کی پشت پناہی کی ۔

0 comments
bottom of page