top of page

بورڈ آف انٹرمیڈیٹ اینڈ سیکنڈری ایجوکیشن راولپنڈی کے زیر انتظام امتحان میٹرک 2023 ۔ مشترکہ اعلامیہ

دینہ(سید ذوالقرنین شاہ)بورڈ آف انٹرمیڈیٹ اینڈ سیکنڈری ایجوکیشن راولپنڈی کے زیر انتظام پہلا سالانہ امتحان میٹرک 2023 جو یکم اپریل 2023سے شروع ہو رہا ہے چیئرمین بورڈ محمد عدنان خان اور کنٹرولر امتحانات ساجد محمود فاروقی نے مشترکہ اعلامیہ جاری کرتے ہو ئے کہا کہ تعلیمی بورڈ راولپنڈی میں امتحان کو فول پروف اور ہر لحاظ سے صاف شفاف بنانے کے لیے چند انتہائی اہم نوعیت کے فیصلے کیے گئے ہیں جو فوری طور پر نافذالعمل ہیں۔ تمام سپرنٹینڈنٹ ڈپٹی سپرنٹینڈنٹ اور نگرانوں کا ریکارڈ کی چھان بین کے لیے لسٹیں مرتب کرکے سپیشل برانچ اور انٹیلی جنس بیورو کوبھیج دی گئی ہیں۔ سوالیہ پرچوں کے تمام لفافوں پر چھیڑ چھاڑ/وقت سے پہلے اشاعت سے بچنے کے لیے لفافوں پر خفیہ کوڈ لگا دیا گیا ہے۔ہر امتحانی سنٹر کے لیے ایک آئی ٹی کلرک تقرر کردیا گیا ہے جو امیدواران اور عملے کی بروقت حاضری بورڈ کو آن لائن کرنے میں ریذیڈنٹ انسپکٹر کی معاونت کرے گا مگر اسے دیگر امتحانی عملے یا امیدواران سے براہ راست رابطے کی اجازت ہرگز نہ ہو گی۔ تمام چھ اضلاع میں مانیٹرنگ کو موثر بنانے کے لیے الگ الگ چھاپہ مار ٹیمیں تشکیل دے دی گئی ہیں۔ کنٹرولر امتحانات کا کہنا تھا کہ ہم بورڈ کے تمام وسائل کو بروئے کار لاتے ہوئے اور تحصیل ضلعی اور ڈویژنل انتظامیہ کے تعاون سے بوٹی اور نقل مافیا کو انشاء اللہ ختم کریں گے انہوں نے مزید کہا کہ چیف سیکرٹر ی پنجا ب کی خصوصی ہدایت پرکمشنر راولپنڈی کی طرف سے تمام اضلا ع کے ڈپٹی کمشنرز، ایڈیشنل کمشنرز اور اسسٹنٹ کمشنرز کو ہدایات جاری کی گئی ہیں کہ تمام امتحانی مراکز کی مانیٹرنگ روزانہ کی بنیاد پر کی جائے اور تمام افسران ایس ایف ٹو پر اپنی حاضری کے ساتھ ریمارکس بھی تحریر کریں امتحانی سنٹر کی مانیٹرنگ سخت اور جامع کریں تاکہ امتحان خو ش اسلوبی سے مکمل ہو سکے۔چیئرمین اور کنٹرولر امتحانات نے آخر میں کہا کہ طلبہ کو بہترین امتحانی سہولیات فراہم کریں گے تاکہ وہ اپنا امتحان خوش اسلوبی سے دے سکیں تمام امتحانی مراکز میں چیئر مین سکواڈ، سپیشل سکواڈ، موبائل انسپکٹرز اور ویجیلنس کمیٹیاں روزانہ کی بنیاد پر امتحانی مراکز کی انسکپشن کر کے اپنی رپورٹ بورڈ آفس کو ارسال کریں گے اور ان رپورٹس کی بنیاد پر انتظاما ت کو مزید بہتر بنایا جائے گا اور شکایات کا فوری ازالہ کیا جائے گا تا کہ کسی کی حق تلفی نہ اور شامل امتحان ہونے والے امیدواران کو ان کی محنت کا ثمر مل سکے۔

0 comments
bottom of page