top of page

*انتہائی قابلِ غور* (قسط نمبر1) بقلم: *ڈاکٹر فیض احمد بھٹی*

*انتہائی قابلِ غور* (قسط نمبر1)

بقلم: *ڈاکٹر فیض احمد بھٹی*

✓9مئی جلاؤ گھیراؤ اور توڑ پھوڑ کے بعد بعض اینکرز اور سیاستدان بار بار انڈیا کی مثالیں دیتے رہے۔ مگر یاد رکھیں کہ جس طرح اسرائیل ( یعنی یہودی) کبھی مسلمان کا خیر خواہ نہیں ہوسکتا، اسی طرح انڈیا کبھی پاکستان کا خیر خواہ نہیں ہو سکتا۔ سو انڈیا جیسے مکار اور خون خوار ملک کی مثالیں دینے سے اجتناب کرنا چاہیے۔

✓جعلی ڈکٹروں، حکیموں، انجینئیروں، وغیرہ کے خلاف تو سخت کاروائیاں کی جاتی ہیں، جو بلکل درست ہیں۔ مگر جعلی مُفتیوں، اور بے سند سکالروں (جو فیس بک اور یوٹیوب پر بیٹھ کر سرعام اللہ و رسول ص، خاص کر صحابہ کی مسلسل توہین اور گستاخیاں کر رہے ہیں۔ اور اپنے بے لاگام خود ساختہ مطالعے سے نوجوان نسل کو مذہبی اعتبار سے گمراہ کر رہے ہیں) ان کے خلاف کوئی کاروائی نہیں، کوئی قانون ضابطہ نہیں۔ ریاست بھی خاموش اور عدالت بھی خاموش!

✓وہ نام نہاد مسلمان جو اسلام کےلیے آستین کے سانپ بنے ہوے ہیں، جیسا کے قادیانی اور اس طرح کے دیگر مرتدین۔ امریکہ سرکار سمیت پورے یورپ کے ہاں ان کا اسلام بھی معتبر، اسلام کے حوالے سے انکی خود ساختہ تشریحات بھی قابل قبول۔ ان کےلیے ہر طرح کی سفارتکاری و سہولتکاری بھی موجود. انہیں پُر امن مسلمان قرار دے کر بآسانی اپنے ملکوں میں پناہ بھی دی جاتی ہے۔ مگر جو لوگ اسلام کو مِن عن قبول کرنے والے سچے اور مخلص پیروکار ہیں، انہیں دن رات تنقید کا نشانہ بنایا جاتا ہے۔ بدنام کیا جاتا ہے۔ دہشت گردی کے ٹیگ لگائے اور لگوائے جاتے ہیں۔ ان کا جینا دوبھر کیا جاتا ہے، چاہے وہ جہاں بھی ہوں، اور بھلے تمام قانونی تقاضوں کے ہی ساتھ رہائش پذیر کیوں نا ہوں۔

✓جب ہم پھل فروٹ سبزیاں یا اجناس مثلا: تربوز گرما خربوزہ پیٹھا کدو مٹر آلو پیاز وغیرہ وغیرہ خریدتے ہیں، تو قیمت چھلکون سمیت ادا کرتے ہیں۔ پھر کتنے کتنے موٹے چھلکے اترتے ہیں، صفائی کے بعد کتنا کم مواد باقی بچتا یے۔ تب ہم برداشت کر جاتے ہیں۔ کوئی تکلیف یا ٹینشن محسوس نہیں کرتے۔ مگر جب اللہ کے دیئے ہوے مال سے تھوڑی سی زکوٰة یا صدقہ دینا پڑے تو ہم کومے میں چلے جاتے ہیں۔ اور اسے اضافی بوجھ محسوس کرتے ہوے طرح طرح کے حیلے بہانوں سے جان چھڑا لیتے ہیں!

✓لوگ جب شادی شدہ بہنوں اور بیٹیوں کے گھر جاتے ہیی تو کھاتے پیتے نہیں، کیونکہ بہن بیٹی کے گھر سے کھانا پینا انکے نزدیک شرم و حیا اور غیرت کے منافی ہے۔ مگر بہنوں اور بیٹیوں کا حقِ وراثت کھاتے وقت شرم و حیا اور غیرت مر جاتی ہے۔

(جاری ہے۔۔۔۔)

0 comments

Recent Posts

See All

احتجاج....... تحریر۔۔۔ حافظ محمد ندیم عنصر۔دینہ

احتجاج....... تحریر۔۔۔ حافظ محمد ندیم عنصر۔دینہ nadeemansir@hotmail.com یہ گل بھی بڑا عجیب ہے کانٹوں کے درمیان رہتا ہے اور خوشی بکھیرتا ہے۔جی ہاں! موسم بہار کے گل کی بات کر رہا ہوں۔لوگ اسے پیار اور مح

bottom of page