top of page

امیر عبدالقدیر اعوان کا لندن (انگلینڈ) ہنسلو جامع مسجد میں جمعتہ المبارک کے موقع پر خطاب

جہلم( ادریس چودھری)قرآن کریم اللہ کریم کا ذاتی کلام ہے یہ وہ کتاب ہے جو جامع ہے،اکمل ہے،اس میں کوئی شک یا شبہ کی گنجائش نہیں جسے اللہ کریم نے اپنی عبادت کو پیدا فرمایا اس کے لیے تعلیم فرمائی جا رہی ہے۔قرآن کریم کو دیکھنا،چھونا عبادت ہے لیکن اصل مقصد اس کو پڑھنا سیکھنا اور اپنے آپ پر نافذ کرنا اور دوسروں تک پہنچانا ہے۔یہ کتاب ہمیں بتاتی ہے کہ ہم نے زندگی کیسے گزارنی ہے۔انسانی مزاج ہے کہ یہ مل جل کر رہتا ہے اس کے اعمال کا اثر نہ صرف اس کی اپنی ذات کو متاثر کرتا ہے بلکہ پورے معاشرے پر اثر انداز ہوتا ہے۔تو جب انسانی زندگی اللہ کریم کے احکامات کے مطابق بسر ہوگی پھر سارے معاشرے میں بہتری آئے گی۔یہی وہ کتاب ہے جو ہماری رہنمائی فرماتی ہے کہ زندگی کو کیسے گزارنا ہے اور صدیاں اس بات پر گواہ ہیں کہ جو عمل قرآن کریم کی راہنمائی میں کیا جائے گا اس کے اثرات مثبت ہوں گے اور وہ عمل کرنے میں بھی انتہائی آسان ہوگا۔

امیر عبدالقدیر اعوان شیخ سلسلہ نقشبندیہ اویسیہ کا لندن (انگلینڈ) ہنسلو جامع مسجد میں جمعتہ المبارک کے موقع پر خطاب

انہوں نے کہا کہ جس طرح زندگی میں کامیابی کے لیے ہم اپنی ترجیحات کا دھیان رکھتے ہیں سارا دن محنت کرتے ہیں آپ کو درست سمت کی ضرورت ہوتی ہے تا کہ ہماری زندگی کامیاب گزرے اور ایک دن بھی ضائع نہیں کرتے اسی طرح جب آخرت کی بات آئے گی تو اللہ کریم فرماتے ہیں اس کتاب میں ہدایت ہے ان لوگوں کے لیے جو متقی ہیں جو اللہ کریم سے اپنا رشتہ جوڑنا چاہتے ہیں ان کی انگلی تھا م کر یہ کتاب ان کو لے کر چلتی ہے۔جیسے ارشاد ہے کہ نماز بے حیائی اور برائی سے روکتی ہے اب اگر معاشرے سے صرف بے حیائی اور برائی ختم ہو جائے تو یہی معاشرہ جنت جیسا ہو جائے ہر ایک سلامتی میں ہو سکھ میں سکون میں ہو۔اپنی زندگیوں کو قرآن کریم اور نبی کریم ﷺ کے حکم کے تحت لے آئیں گے تو دنیا و آخرت میں کامیابی نصیب ہوگی۔ اللہ کریم صحیح شعور عطافرمائیں

آخر میں انہوں نے امت مسلمہ کے اتحاد کے لیے دعا بھی فرمائی۔

0 comments
bottom of page