top of page

القاسم انسٹیٹیوٹ اسپیشل ایجوکیشن فار چلڈرن سکول جہلم تاریخ کے آئینے میں تحریر. مصطفیٰ بٹ جہلم


القاسم انسٹیٹیوٹ اسپیشل ایجوکیشن فار چلڈرن سکول جہلم تاریخ کے آئینے میں

تحریر مصطفیٰ بٹ

القاسم انسٹیٹیوٹ اسپیشل ایجوکیشن فار چلڈرن سکول اسلام پورہ جہلم میں رزلٹ ڈے کے موقع پر تقریب منعقد کی گئی جس میں مجھے بھی شرکت کرنے کا موقع ملا رزلٹ کی تقریب میں بچوں کے والدین کے علاؤہ شہر بھر سے سیاسی۔سماجی۔اور کاروباری شخصیات نے شرکت کی اور فسٹ سیکنڈ پوزیشن حاصل کرنے والے بچوں میں انعامات تقسیم کیے آنے والے مہمانوں کو عمر بٹ۔

صدر القاسم انسٹیٹیوٹ طارق محمود بٹ۔ سئنیر نائب صدر ریاض چوہدری اور دیگر کونسل کے ممبران نے آنے والے مہمانوں کو ویلکم کیا

تقریب کا آغاز تلاوت قرآن پاک اور نعت رسول مقبول صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم سے کیا گیا

اس موقع پر سکول کے بچوں نے ٹیبلو پیش کیے جیسے آنے والے مہمانوں اور بچوں کے والدین نے بہت پسند کیا اور دل کھول کر بچوں کو داد دی

اس کے بعد سٹیج سیکرٹری عمر بٹ نے بچوں کے رزلٹ اناؤنسر کیے آنے والے مہمانوں نے پوزیشن حاصل کرنے والے بچوں میں انعامات تقسیم کیے اور ادارے کی کارکردگی کو دیکھتے ہوئے 6 لاکھ روپے ڈونیشن بھی دی

اس موقع پر القاسم انسٹیٹیوٹ اسپیشل ایجوکیشن چلڈرن سکول اسلام پورہ جہلم کے صدر طارق محمود بٹ نے ادارے کے بارے میں بتایا کہ القاسم انسٹیٹیوٹ اسپیشل ایجوکیشن چلڈرن سکول کی بنیاد سنہ 1984 میں ایک کمرہ کرائے پر لے کر ڈاکٹر میجر (ر) یوسف اور محترمہ ساجدہ احمد نے رکھی اس وقت اس ادارے میں صرف دو بچے تھے اس وقت اللہ داد انصاری ایڈمنسٹریٹر تھے اور اب اس ادارے میں تقریباً 100 کے قریب بچے اور بچیاں تعلیم حاصل کر رہے ہیں

آس ادارے میں بچوں کو فری تعلیم دی جا رہی ہے تعلیم کے علاؤہ ہنر بھی سیکھایا جاتا ہے سکول میں بچوں کو کتابیں کاپیاں اور سکول یونیفارم کے علاؤہ بچوں کو گھر سے پک اینڈ ڈراپ کی سہولت بھی دی گئی ہے

ہفتے میں 4 دن بچوں کو ریفریشمنٹ بھی دی جاتی ہے اب اس ادارے کے اسٹاف کی تعداد 21 ہے جن کا ماہانہ خرچہ تقریباً 5 لاکھ 50 ہزار روپے ہے اور 8 افراد کونسل کے ہیں جو والنٹیئر کام کر رہے ہیں

القاسم انسٹیٹیوٹ اسپیشل ایجوکیشن چلڈرن سکول اسلام پورہ کے اسٹاف کی جانب سے ان بچوں کو پاکستان کے مختلف شہروں میں کھیل کے میدان میں بھی اتارا گیا

جس میں بچوں نے گولڈ میڈل کے علاؤہ انعامات جیت کر اپنا اپنے سکول اور جہلم کا نام روشن کیا

حال ہی میں سنہ 2023 میں بچوں نے جرمنی کے شہر برلن میں انٹرنیشنل گیمز میں شرکت کی اور وہاں سے سات گولڈ میڈل جیت کر پاکستان کا نام روشن کیا

سنہ 1989سے لے کر سنہ 2015 تک اسپیشل اولمپکس پاکستان کے تحت مختلف گیمز میں اپنی بہترین کارکردگی کا مظاہرہ کرتے ہوئے ریجنل صوبائی اور قومی کھیلوں میں 390 گولڈ میڈل اور 258 سلور میڈل اور 126 کانسی کے میڈل جیت کر مثال قائم کی

انٹرنیشنل گیمز کے حوالے سے القاسم انسٹیٹیوٹ کے بچوں نے سنہ 2006 میں بھارت کے شہر دہلی میں کرکٹ میں اچھے کھیل کا مظاہرہ کرتے ہوئے سلور کا میڈل حاصل کیا

سنہ 2007 میں عالمی گیمز کے مقابلوں میں چائینہ کے شہر شنگھائی میں فٹبال اتھلیٹکس اور سائکلینگ کے مقابلوں میں سلور اور کانسی کے تمغے حاصل کیے

سنہ 2009 میں بھارت کے شہر ممبئی میں کرکٹ کے مقابلوں میں سلور کا میڈل حاصل کیا

سنہ 2015 میں نیشنل فٹبال چیمپئن شپ پشاور میں نیشنل ٹیموں کے مقابلوں میں دوسری پوزیشن حاصل کی اور سلور میڈل حاصل کیا

ہمارے ادارے میں اس وقت تقریباً 700 کے قریب میڈل موجود ہیں جو ان بچوں نے مختلف شہروں میں گیمز میں شرکت کر کے جیتے ہیں آخر میں صدر طارق محمود بٹ آنے والے تمام مہمانوں کا شکریہ ادا کیا ۔۔۔

0 comments

댓글

별점 5점 중 0점을 주었습니다.
등록된 평점 없음

평점 추가
bottom of page