top of page

اراضی ریکارڈ سنٹر جہلم، نان پروفیشنل،سٹاف خوش گپیوں میں مصروف رہنے لگاشہری ذہنی مریض بننے لگے

دینہ( پروفیسر خورشید احمد ڈار)اراضی ریکارڈ سنٹر جہلم نان پروفیشنل ہونے کی بنا پر شہریوں کو ذہنی مریض بنانے میں مصروف عمل ہے۔ڈپٹی کمشنر جہلم ناگزیر وجوہات کی بنا پر بروقت ایکشن لیں۔سماجی زعماء جہلم

تفصیلات کے مطابق اراضی ریکارڈ سنٹر جہلم کے متعلق شکایات اخبارات کی زینت بنتی رہتی ہیں گزشتہ روز شکایات کا جائزہ لینے کے لئے مذکورہ ریکارڈ سنٹر میں 3 گھنٹے مسلسل کاونٹر پر کام کرنے والوں کی کارگزاری کا مشاہدہ کیا گیا۔مشاہدے میں جو بات سامنے آئی ہے وہ یہ ہے کہ اس ادارے میں کمپیوٹر پر بیٹھا عملہ نصف وقت سے زیادہ خوش گپیوں میں مصروف رہتا ہے۔مہارت کا اس قدر فقدان ہے کہ سائل کو مسلسل کئی گھنٹوں تک انتظار کرنا پڑتا ہے۔نااہلی کا بین ثبوت یہ ہے کہ جب کوئی اہل کار اس نتیجے پر پہنچ جاتا ہے کہ وہ یہ کام نہیں کر سکتا تو دوسرے اہلکار کے پاس سمجھنے کے لئے چلا جاتا ہے۔مقام حیرت ہے کہ دوسرا اہلکار بھی اس اہلکار کو کسی تیسرے کی طرف ریفر کر دیتا ہے۔سائلین بغیر کام کروائے مسلسل انتظار کرنے کے بعد واپس لوٹ جاتے ہیں۔یہ کہنا قرین انصاف ہوگا کہ اسسٹنٹ ڈائریکٹر لینڈ ریکارڈ کی عدم دلچسپی کی وجہ سے مذکورہ قباحتیں جنم لے رہی ہیں۔ضرورت اس امر کی ہے کہ نہ صرف نا اہل لوگوں کو ٹرانسفر کیا جائے بلکہ اسسٹنٹ ڈائریکٹر لینڈ ریکارڈ جہلم سے بھی باز پرس کی جائے کہ وہ فرائض منصبی سر انجام دینے میں کیوں قاصر ہیں۔

0 comments
bottom of page